_وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی کی پارلیمنٹ میں پارلیمانی کمیٹی برائے کشمیر کو مسلہ کشمیر پر تفصیلی بریفنگ

0
1017

2018 مقبوضہ کشمیر میں شدید بربریت کا سال تھا جس میں پانچ سو سے زیادہ کشمیری شہید ہوئے
2019مئ تک 9426 کشمیری پیلٹ گنزز سے متاثر ہونے

پاکستان کا موقف یہ ہے کہ
کشمیر بین الاقوامی سطح پر ایک تصفیہ طلب مسئلہ ہے

اس مسئلے کا حل کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق ہونا چاہئے

پاکستان کشمیریوں کی حق خود ارادیت کی جدوجہد کی حمایت کرتے رہے گا

ہم کل بھی کشمیریوں کے ساتھ تھے اور آیندہ بھی انکے اصولی موقف کی حمایت جاری رکھیں گے

ہم نہتے کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کے خلاف ہر فورم پر آواز بلند کرتے رہیں گے

اقوام متحدہ کے ہیومن رائٹس کمیشن بابت کشمیر کی جون 2018 میں جاری ہونے والی رپورٹ اور

یو کے آل پارٹیز پارلیمانی گروپ کی رپورٹس نے نہ صرف کشمیر کے حوالے سے ہمارے موقف کی تصدیق کی ہے بلکہ ان کشمیریوں کے خلاف ڈھائے جانے والے مظالم کے ذمہ داروں کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائے جانے کا مطالبہ کیا ہے

ہم نے 5 فروری یوم کشمیر کے حوالے سے لندن میں ہاؤس آف کامنز میں جب کشمیریوں کے حق میں آواز اٹھائی تو وہاں ہمارے ساتھ پاکستان کی تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندے یک، زبان تھے اور برطانوی پارلیمنٹ میں تل دھرنے کی جگہ نہیں تھی

یو کے پارلیمنٹرینز نے ایک متفقہ قرارداد پیش کی جس کا لب لباب یہ تھا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے

19 فروری 2019 کو یورپین یونین کے پارلیمانی رہنماؤں نے اپنی مشترکہ قرارداد میں مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے

یو اے ای میں جب او آئی سی کی وزرائے خارجہ کانفرنس منعقد ہوئی جس میں ہم ہندوستان کو بلائے جانے کی وجہ سے احتجاجا شامل نہیں ہوئے اس کانفرنس میں ششما جی کی موجودگی میں ہندوستان کو کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کے سبب اسے اسٹیٹ ٹیرراازم کے لقب سے نوازا گیا

ابھی اسی ماہ مکہ میں اسلامک سمٹ کا انعقاد ہو رہا ہے
29 مئی کو فارن منسٹرز کی میٹنگ ہوگی جس میں میں پاکستان کی نمائندگی کرونگا

ھندوستان جو خود کو دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہونے کا دعویٰ کرتا ہے دنیا کے سامنے اس کا سیاہ چہرہ لانا ہو گا

اس بدلتے ہوئے تناظر میں ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم مسئلہ کشمیر کو پوری شد و مد کے ساتھ ہر فورم پر اٹھاتے رہیں گے

پارلیمانی کمیٹی برائے کشمیر انتہائی اہمیت کی حامل ہے ہماری طرف سے، دفتر خارجہ کی طرف سے اس کمیٹی کی معاونت جاری رہے گی

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here